نیشنل گیمز میں قبائلی اضلاع کی نمائندگی ختم کرنے کے خلاف کھلاڑیوں کا احتجاج

Share on facebook
Share on google
Share on twitter
Share on linkedin

باجوڑ سپورٹس کمپلکس میں آل سپورٹس ایسوسی ایشنز کے زیر اہتمام نیشنل گیمز میں ضم شدہ قبائلی اضلاع (سابقہ فاٹا) کی نمائندگی ختم کرنے کے خلاف احتجاجی مظاہرہ کیا گیا۔

مظاہرے میں کھیلوں کے مختلف ایسوسی ایشنز کے عہدیداروں اور کھلاڑیوں نے بڑی تعداد میں شرکت کی جنہوں نے بینرز اور پلے کارڈ اُٹھارکھے تھے جن پر ضم شدہ اضلاع کے کھلاڑیوں کو مواقعے دئیے جائیں، ضم شدہ اضلاع کے کھلاڑیوں کے ساتھ ظلم بند کیاجائے اور دیگر نعرے درج تھے۔

مظاہرین سے خطاب کرتے ہوئے وحیدگل، حبیب اللہ، عطاء الرحمن مغل، حسین احمد اور دیگر نے کہا کہ قبائلی اضلاع کے صوبے میں انضمام سے قبل نیشنل گیمز میں 300 کھلاڑیوں کا دستہ شامل ہوتا تھا لیکن حکومت اپنے وعدوں کی خلاف ورزی کررہی ہے۔

مقررین نے کہا کہ حکومت نے وعدہ کیا تھا کہ قبائلی اضلاع کے صوبے میں انضمام کے بعد بھی وہاں کا کوٹہ برقرار رکھا جائے گا لیکن افسوس کا مقام ہے کہ پہلے فاٹا اولمپک کو ختم کیاگیا اور اب نیشنل گیمز میں قبائلی اضلاع کی شرکت کو ختم کیاگیاہیں۔

شرکاء کا کہنا تھا کہ ہمارے علاقوں میں کھیلوں کیلئے وہ سہولیات میسر نہیں جو شہری علاقوں اور دیگر اضلاع میں موجود ہیں تو ہم اُن کا مقابلہ کیسے کرینگے۔

مظاہرین نے مطالبہ کیا کہ حکومت اپنے وعدے کو مد نظر رکھ کر قبائلی اضلاع کیلئے جو پرانے مراعا ت ہیں وہ 5 سال تک برقرار رکھیں۔

Make Money with 1xBet