صوابی وومن یونیورسٹی: قبائلی طلباء کا کوٹہ دگنا نہ کرنے کے خلاف احتجاج

Share on facebook
Share on google
Share on twitter
Share on linkedin

صوابی وومن یونیورسٹی کی طالبات نے آن لائن امتحان کے خلاف احتجاجی مظاہرہ کیا۔ طالبات نے مین ٹوپی صوابی روڈ بند کرکے احتجاج کیا۔

صوابی وومن یونیورسٹی کی طالبات نے وی سی کے خلاف احتجاج کیا۔طالبات نے وی سی کے خلاف نعرے بازی کی اور کہا کہ وہ آن لائن امتحان نہیں دیں گے۔

انہوں نے کہا کہ یونیورسٹی سے انکو دھمکیاں مل رہی ہے، ان کا احتجاج اس وقت تک جاری رہے گا جب تک انکے مطالبات نہیں مانے جاتے، اگر مطالبات نہیں مانے گئے تو امن چوک صوابی میں احتجاج کریں گے۔

دوسری جانب خیبر پختونخوا کے قبائلی اضلاع کے طلباء نے میڈیکل کالجوں میں کوٹہ سیٹس دگنا نہ کرنے کے خلاف احتجاجی مظاہرہ کیا۔

مظاہرین نے حکومت اور پاکستان میڈیکل کمیشن کے خلاف نعرے بازی کرتے ہوئے کہا کہ سابقہ فاٹا کے طلبہ تعلیمی سہولیات کی عدم دستیابی کے باوجود مشکل سے تعلیم حال کررہے ہیں لیکن انہیں پڑھنے نہیں دیا جارہا۔

مظاہرے کی قیادت کرتے ہوئے ارشد داوڑ نے بتایاکہ سرتاج عزیر کمیٹی نے فاٹا مرجر کے وقت قبائلی اضلاع کے طالب علموں کے لئے ملک کے تعلیمی اداروں میں میڈیکل اور انجینئرنگ سمت دیگر شعبوں کے سیٹس دس سال کےلئے ڈبل کرنے کا فیصلہ کیا لیکن افسوس کی بات ہے کہ حکومت اپنے فیصلے سے مکر گئی ہے۔

انہوں نے کہا کہ گزشہ سال میڈیکل کالجوں میں فیصلے کے مطابق کوٹہ سیٹوں کی تعداد دگنا کی گئی تھی لیکن اس سال پھر پی ایم سی ٹال مٹول سے کام لے رہی ہے۔