ضم شدہ اضلاع میں سٹیل ملوں سے سیلز ٹیکس وصولی پر حکم امتناعی جاری

Share on facebook
Share on pinterest
Share on twitter
Share on linkedin
Share on whatsapp

پشاور ہائیکورٹ نے ایف بی آر کو ضم شدہ اضلاع میں سٹیل ملز سے سیلز ٹیکس وصولی سے روک دیا۔

نمائندہ ٹرائبل پریس کے مطابق عدالت نے قبائلی اضلاع میں سٹیل ملز سے سیلز ٹیکس وصولی کے حوالے سے حکم امتناعی جاری کیا اور ایف بی آر کو نوٹس جاری کرتے ہوئے جواب مانگ لیا۔

کیس کی سماعت پشاور ہائیکورٹ کے جسٹس روح الامین اور جسٹس محمد نعیم انور پر مشتمل دو رکنی بینچ نے کی۔

درخواست گزار کے وکیل اسحاق علی قاضی نے عدالت کو بتایا کہ ایف بی آر نے سابقہ فاٹا اور پاٹا میں قائم سٹیل ملز سے  بجلی کے بلوں میں 17 فیصد سیلز ٹیکس وصول کر رہی ہے حالانکہ حکومت نے ان اضلاع کو ٹیکسز سے مستثنی قرار دیا ہے۔

انہوں نے عدالت کو بتایا کہ حکومت نے موجودہ بجٹ میں سٹیل ملز پرسیلز ٹیکس عائد کیا تھا جس کو عدالت نے کالعدم قرار دیا تھا تاہم عدالتی حکم کے باوجود حکومت نے بجٹ میں سٹیل ملز پر سیلز ٹیکس عائد کیا جو غیر قانونی ہے۔

انہوں نے عدالت سے سیلز ٹیکس کو کالعدم قرار دینے کی استدعا کی جس پر عدالت نے ایف بی آر کو سابقہ فاٹا اور پاٹا میں قائم سٹیل ملز سے سیلز ٹیکس وصول نہ کرنے کے احکامات جاری کئے اور متعلقہ حکام کو نوٹس جاری کرتے یوئے جواب طلب کر لیا۔