کوہی شیرحیدر کالج میں 320 سیٹس کے لیے 1600 درخاستیں

Share on facebook
Share on google
Share on twitter
Share on linkedin

خیبرسٹوڈنٹس یونین نے تحصیل باڑہ میں قائم واحد گورنمنٹ ڈگری کالج کوہی شیرحیدر میں سیکنڈ شفٹ کلاسز شروع کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔

خیبر سٹوڈنٹس یونین کے مرکزی صدر عارف آفریدی نے اپنے دیگر ساتھیوں سمیت باڑہ پریس کلب میں پریس کانفرنس میں کی۔ پریس کانفرنس کے دوران انکا کہنا تھا کہ ضلع خیبر کے تحصیل باڑہ میں امسال 124 طالبات بشمول 1932 طلباء نے میٹرک کا امتحان پاس کیا جبکہ تحصیل باڑہ میں واحد گورنمنٹ ڈگری کالج کوہی شیر حیدر میں صرف 320 طلباء کیلئے سیٹس ہیں جبکہ 1600 سے زائد طلباء نے فارم جمع کرائیں ہیں۔

انہوں نے کہا کہ کالج میں 40 ٹیچنگ سٹاف کی ضرورت ہے جبکہ اس میں صرف 20 اساتذہ ہیں، دوسری جانب کالج میں ٹوٹل 1700 طلباء کیلئے 14 کلاس رومز ہیں۔ انہوں نےکہا کہ تبدیلی کی دعویدارحکومت قبائلی علاقوں میں ریفارمز کے دعوے کر رہی ہیں جبکہ باڑہ میں سینکڑوں طلباء تعلیم سے محروم ہو رہے ہیں۔

پریس کانفرنس میں انہوں نے مطالبہ کیا کوہی شیرحیدر ڈگری کالج میں بی اے اور بی ایس سی سمیت چار سالہ بی ایس پروگرام کا اجرا کیا جائے تاکہ علاقے کے طلباء کو اپنے علاقے ہی میں تعلیم حاصل کرنے کی سہولت میسر ہو۔

انہوں نے بات کرتے ہوئے کہا کہ ضلع خیبر سے تعلق رکھنے والے چار سینیٹرز, دو ایم پی ایز سمیت دو ایم این ایز جن میں ایک وفاقی وزیر اور دوسرا پارلیمانی سیکریٹری ہے جبکہ دوسری جانب تحصیل باڑہ میں ایک ڈگری کالج ہے جس میں سیٹوں کی کمی کی وجہ سے سینکڑوں طلباء تعلیم سے محروم ہو رہے ہیں۔

پریس کانفرنس میں کے ایس یو کے طلباء نے باڑہ میں شلوبر, عالم گودر اور اکاخیل میں گورنمنٹ ہائی سکولز کو ہائیر سیکینڈری کا درجہ دینے کا مطالبہ بھی کیا کہ سینکڑوں طلباء کا مسقبل تاریک ہونے سے بچ جائے۔ پریس کانفرنس کے موقع پر دیگر شرکاء میں زاہد اللہ آفریدی, محمد صدیق, داؤد خان اور ہاشم سمیت دیگر موجود تھے۔

انہوں نے اخر میں مطالبہ کیا کہ تحریک انصاف کی حکومت کالج کی بلڈنگ، پرنسپل رہائش گاہ ، ٹیچنگ سٹاف ، کمپیوٹر لیب، سائنس لیبارٹری اور انٹرنیٹ جیسی بنیادی مسائل حل کریں اور قبائل دوست پالیسی کا ثبوت دیں۔